Just Bliss

Posts Tagged ‘books

19203123-english-teacher-sitting-at-the-table-and-smiling-to-the-camera

The Seasons come and the seasons go

But the Season of memories never goes

It has undying settled deep in my heart

I remember I read it somewhere in a book

When you see new faces reflect in old faces

Old memories move with new full of life faces

I believe you are also one of those lost faces

Memory of fine old days, rising as new face

It‘s closer to me now; fading memories!

You know the fine days we spent together

It makes me sad to think of departing you

So keep myself engaged just to forget you

I write poetry and lyrics to keep occupied

I restrain to read, write and lost in books

Thy recollections sting me more in loneliness

And thy remembrance liven up in loneliness

Fragrance of beautiful memories relish me

The fragrance engulfs the ambiance and me

And I continue my life’s journey swiftly ——–

…………………………………………………..

یاد کہانی
موسم آتے جاتے ہیں
مگر یاد کا موسم نہیں گزرتا
عین دِل کے اوپر کہیں ٹھہر جاتا ہے
میں نے کسی کتاب میں پڑھا تھا
جب پُرانی شکلیں نئی شکلوں میں نظر آنے لگیں
تو پرانی یادیں نئے جیون کے ساتھ سفر کرنے لگتی ہیں
مجھے لگتا ہے شاید تم بھی
ایسی ہی کسی یاد کا چہرہ ہوا
سانولی یاد کا
جو میرے قریب آگیا ہے
کہ پرانی یادیں مٹنے لگی ہیں
تم سے جدائی کا موسم مجھے اُداس کرنے لگا ہے
تمہیں معلوم ہے
تمہارے ساتھ بیتے دِن بھلانے کے لیے
میں خود کو مصروف رکھنے کی کوشش کرتی ہوں
نظمیں لکھتی ہوں، شعر کہتی ہوں اور
کتابوں میں اپنا آپ گم کر لیتی ہوں
مگر دل پر ایسی تنہائی گزرتی ہے کہ
یاد کی اگر بتیاں آپ ہی آپ
سُلگ اٹھتی ہیں
جن کی خوشبو میرے چاروں اور پھیل جاتی ہے
دُور دُور تک
اور میں نہ چاہتے ہوئے بھی
اِس دھیمی سی خوشبو کے ساتھ
سفر کرنے لگتی ہوں !!
نجمہ منصور

 

 

 

beauty1

Don’t stop me to spread around, I’m fragrance

Don’t try collect me, if lost around in ambiance

I shudder whenever I think about, in aloofness

My expressions may not unveil your appellation

Just as my keen dreams shattered heartlessly

No other would ever broke like me heartlessly

I fear the day when it’s banned and restricted

To keep flowers in books in one’s remembrance

He never passes through this pathway since long

Why to peep through the door to see his glimpse

No sound, no sign, no word, nothing is perceived

My heart’s forlorn and lonely; anyone’s celebrated

عکسِ خوشبو ھوں بکھرنے سے نہ روکے کوئی
اور بکھر جاؤں تو مجھ کو نہ سمیٹے کوئی
کانپ اُٹھتی ھوں میں یہ سوچ کے تنہائی میں
میرے چہرے پہ تیرا نام نہ پڑھ لے کوئی
جس طرح میرے خواب ھوئے ریزہ ریزہ
اس طرح ٹوٹ کے نہ بکھرے کوئی
میں تو اس دن سے ہراساں ھوں کہ جب حکم ملے
خشک پھولوں کو کتابوں میں نہ رکھے کوئی
اب تو اس راہ سے وہ شخص گزرتا ھی نہیں
اب کس امید پہ دروازے سے جھانکے کوئی
کوئی آہٹ کوئی آواز، کوئی چاپ نہیں
دل کی گلیاں بڑی سنسان ھیں آئے کوئی


Enter your email address to follow this blog and receive notifications of new posts by email.

Join 920 other followers

Archives

Archives

May 2019
M T W T F S S
« Feb    
 12345
6789101112
13141516171819
20212223242526
2728293031  

Shine On Award

Dragon’s Loyalty Award

Candle Lighter Award

Versatile Blogger Award

Awesome Blog Content Award

Inner Peace Award

Inner Peace Award

Inner Peace Award

Flag Counter

Flag Counter

Bliss

blessings for all

Upcoming Events

No upcoming events